Swat

سوات، جدید فرانزک لیب کو پشاور منتقل کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا

(باخبر سوات ڈاٹ کام)سوات میں دہشت گردی کے بعد UNDP کی جانب کی جانب سے ملاکنڈ ڈویژن کے لئے قائم کردہ جدید فرانزک لیب کو صوبائی حکومت نے انتخابات سے پہلے سوات سے پشاور منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ جدید فرانزک لیب لنڈاکے کے مقام پر موجود ہے جس میں گاڑیوں کا کیمیکل ایگزامینشن کا عمل، فنگر پرنٹ، مختلف قسم کی منشیات کیمکل ایگزامینشن، اسلحہ و بارود اور فائرنگ کے متعلق ایگزامینشن رپورٹ تیار کرنا، مختلف اقسام کی لکھائی، دستخط، رسیدیں، سٹامپ پیپر اور بنک چیک وغیرہ کا ایگزامینشن عمل شامل ہے۔ موجودہ ریجنل فرانزک سائنس لیبارٹری 2015ء میں یو این ڈی پی کے فنڈ سے قائم ہوئی تھی اور 2020ء تک غیر فعال تھی۔ پھر پشاور ہائی کورٹ کے آرڈر نمبر 1296/NJPIC/PJP پر لیبارٹری کو 10 دسمبر 2020ء سے مکمل فعال کیا گیا تھا، جو اَب تک 25 ہزار سے زائد جرائم میں رپورٹ تیار کرکے عدالتوں کو ارسال کر چکی ہے، جس کی وجہ سے مجرموں کو سزا اور ملزم بری ہوچکے ہیں۔ سوات کے سیاسی و سماجی حلقوں نے اعلان کیاہے کہ اگر اس فرانزک لیبارٹری کو منتقل کرنے کی کوشش کی گئی تو شدید احتجاج کیا جائیگا۔

متعلقہ خبریں

تبصرہ کریں