Swat

سوات، محمود خان اور محب اللہ خان کو غیر متوقع شکست کا سامنا

(باخبر سوات ڈاٹ کام) سابق وزیر اعلیٰ محمود خان اور سابق صوبائی وزیر محب اللہ خان کو سوات سے غیر متوقع شکست ہوئی۔ حالیہ انتخابات میں محمود خان ایک قومی اور ایک صوبائی اور محب اللہ خان ایک صوبائی نشست سے الیکشن لڑ رہے تھے۔ اپنے دورِ حکومت میں محمود خان نے اپنے اور محب اللہ کے حلقوں سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد کو سوات اور خیبر پختون خوا کے مختلف علاقوں میں بھرتی کیا تھا۔ لوگوں کا خیال تھا کہ اگر ایک سرکاری نوکری حاصل کرنے والے کے خاندان کے پانچ افراد بھی ووٹ دیں، تومحمود خان کو ایک لاکھ سے زیادہ ووٹ ملے گا، لیکن اس کے بر عکس انہوں نے جتنے لوگوں کو سرکاری ملازمت دلوائی، ان ملازمین نے بھی محمود خان کو ووٹ نہیں دیا۔ دوسری طرف محب اللہ خان کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ مردوں کو سرکاری ملازمتیں دینے کے ساتھ انھوں نے خواتین کو بھی”فش واچر“ بھرتی کیا تھا۔ محمود خان نے تحصیل مٹہ میں اربوں روپے کا کام بھی کیا۔ سڑکوں، گلی کوچوں کی پختگی کے ساتھ تمام علاقوں میں پانی کے بور کروائے لیکن اس کے باوجود ونوں امیدواروں کو ووٹ نہیں دیا گیا۔

متعلقہ خبریں

تبصرہ کریں