Swat

ملاکنڈ ڈویژن، ٹیکس دفاتر کے لیے زمین کی خریداری،کمیٹی قائم

(باخبر سوات ڈاٹ کام)حکومت نے سابق قبائلی اضلاع اور ملاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس دفاتر کے قیام بارے زمین کی خریداری کے لئے کمیٹی قائم کردی۔آفس آف دی کمشنر ان لینڈ روینو ٹکس آفس پشاور سے جاری کردہ لیٹر نمبر 1674 مورخہ 16 فروری 2024ء میں لکھا ہے کہ سابق قبائلی اضلاع اور ملاکنڈ ڈویژن میں ریجنل ٹیکس آفیسر اور ڈسٹرکٹ ٹیکس آفیسر کے دفاتر کی خریداری کے لئے چار رکنی کمیٹی جن میں محمد عالم ایڈیشنل کمشنر، سید احمد حسین سینئر آڈیٹر، ضیا الرحمان ان لینڈ ریونیو آفیسر اور اسرار علی یوسفزئی ان لینڈ ریو نیو آفیسر پر مشتمل کمیٹی قائم کی ہے، جو ان تمام اضلاع میں ٹیکس آفیسران کے دفاتر کے لئے زمین خریدیں گے جن پر بعد میں ٹیکس دفاتر تعمیر کئے جائیں گے۔ کمیٹی کو بتایا گیا ہے کہ ہر ضلع میں زمین کی خریداری کے لئے ڈپٹی کمشنر سے معاونت کی جائے۔ یاد رہے کہ 1947ء کے بعد پہلی دفعہ سابق قبائلی اضلاع اور 1969ء کے بعد ملاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس دفاتر قائم کیے جارہے ہیں۔ مئی 2018ء میں حکومت نے 25 ویں آئینی ترمیم کے ذریعے قبائیلی اضلاع (فاٹا) اور ملاکنڈ ڈویژن (پاٹا) کی خصوصی حیثیت ختم کی تھی۔ پھر تحریک انصاف کی حکومت نے ان اضلاع کو پانچ سال کے لئے ٹیکس سے مستثنیٰ قرار دیا تھا اور پچھلی حکومت کی آخری بجٹ تقریر میں اس وقت کے وزیر اعظم نے اک سال کا اور استثنیٰ دیا تھا جس کی مدت چند ماہ بعد ختم ہورہی ہے۔

متعلقہ خبریں

تبصرہ کریں